پاکستان کی ضرورت پوری

آس پاس
28
0

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان جو کہ سعودی سرمایہ کاری کے لیے سعودی عرب میں سرمایہ کاری کانفرنس میں شریک ہوئے، باوجود اسکہ کہ واشنگٹن پوسٹ کے کالمنسٹ جمال ہشوشگی کی ترکی میں سعودی سفارتخانے میں قتل کے بعد بہت سے ممالک کے سربراہان نے اس کانفرنس کا بائیکاٹ کیا اور بہت سے نامی گرامی کمپنی جسمیں گوگل اور دوسرے بڑے نام شامل تھے کانفرنس میں شامل نہ ہوئے،
عمران خان کا یہ دورہ کامیاب رہا اور سعودی عرب تین سال کے لیے تین ارب ڈالر پاکستان میں رکھے گا جو پاکستان کے قرضوں کی ادائیگی کے لیے استعمال ہو گا ، اسکے علاوہ سعودیہ پاکستان میں تیل کو رفائینری بھی کھولے گا اور پاکستان کو عالمی قیمت سے مبراہ تیل کی فراہمی بھی کی جائے گی. پاکستانیوں کے لیے سعودی رفائینریز میں کام کے لیے ویزے کی فیس میں بھی کمی اور ویزہ کے خصول میں نرمی برتی جائے گی .
اس کے بعد پاکستان عالمی مالیاتی ادارے سے قرضوں کی عدائیگی کے لیے مزید قرے نہیں لے گا.

Facebook Comments